پروموشن کے لیے رشوت لینے کی شکایت، وزیر کی ہدایت پر ایف آئی آر درج

تاثیر۳      جولائی ۲۰۲۴:- ایس -ایم- حسن

لکھنؤ، 05 جولائی:رائے بریلی رین ضلع میں محکمہ سماجی بہبود کے ذریعہ چلائے جانے والے جئے پرکاش نارائن گرلز اسکول کی معاشیات کی ترجمان شالو کمل نے محکمہ کے وزیر مملکت (آزادانہ چارج) اسیم ارون سے ملاقات کی اور دو سے 1.50 لاکھ روپے لینے کی شکایت کی تھی۔ملزم ٹیچر پونم ورما بھی جے پرکاش نارائن بالیکا ودیالیہ لکھنؤ میں ترجمان ہے۔ شکایت کی بنیاد پر، محکمہ کے وزیر نے پولس کمشنر، لکھنؤ کو متعلقہ سیکشن کے تحت کیس درج کرنے اور غیر جانبدارانہ تحقیقات کرنے کے لیے ایک خط لکھا ہے۔ شکایت کنندہ ٹیچر شالو نے بازار کھالہ پولیس کو درخواست کے ساتھ کچھ ثبوت بھی جمع کرائے ہیں۔
پولیس کو دی گئی درخواست میں شالو نے بتایا ہے کہ اس سال فروری کے مہینے میں ان کے ساتھ کئی دیگر اساتذہ کو بھی ترقی دی جانی تھی۔ فروری میں ہی شکایت کنندہ شالو نے ملزم ٹیچر پونم ورما سے ملاقات کی تھی۔ شالو کا الزام ہے کہ اس دوران پونم نے اسے ترقی دلانے کے لیے لکھنؤ کی رہائش گاہ پر آنے اور ملنے کو کہا۔ 14 فروری کو لکھنؤ میں ملاقات کے بعد درخواست میں لکھا ہے کہ پونم کو 75 ہزار روپے نقد اور 25 ہزار روپے آن لائن دیے جا نے کی بات شکایتی خط میں لکھا ہے۔ پونم نے وارانسی میں تعینات ایک اور ترجمان راگنی سنگھ سے 50,000 روپے لینے کا بھی ذکر کیا ہے۔
ترجمان شالو نے کہا کہ کام نہ ہونے کی وجہ سے جب انہوں نے رقم واپس مانگی تو پونم نے کہا کہ ہم نے ناگیندر صاحب کی ذمہ داری پر رقم لی تھی۔ اگر آپ بحث کریں گے تو آپ کی نوکری ختم ہو جائے گی۔ وہیں شالو کا کہنا ہے کہ پیسے لیتے وقت پونم نے کہا تھا کہ ڈائریکٹوریٹ کے تمام افسران ان کی بات مانتے ہیں اور وہ سارا کام کروا دے گی۔
سماجی بہبود کے محکمہ کے وزیر مملکت (آزادانہ چارج) عاصم ارون نے کہا کہ طویل عرصے کے بعد ہیڈ ٹیچرز کو ترقی دی گئی ہے۔ اس کے لیے مکمل شفافیت اپنانے کی کوشش کی گئی۔ جس بھی ملازم نے رقم لی اس کے خلاف فوجداری اور انتظامی کارروائی کی جائے گی۔ کسی بھی قسم کی کرپشن برداشت نہیں کی جائے گی اور اگر کسی کو ایسی شکایت ہے تو فوراً ملیں۔