کھاد کا جائزہ لینے کے لیے تحقیقاتی ٹیم کی ہوئی تشکیل

تاثیر۹  جولائی ۲۰۲۴:- ایس -ایم- حسن

سیتا مڑھی (مظفر عالم)
ضلع مجسٹریٹ رچی پانڈے کی صدارت میں  زرعی ٹاسک فورس، زرعی مشینری بینک کے قیام کے لیے ضلع سطح کی ایگزیکٹو کمیٹی، مویشی پالنے گاؤں کی ترقی ماہی پروری کے محکمے اور فارمر پروڈیوسر ایسوسی ایشن کے لیے ضلع سطح کی نگرانی کمیٹی تشکیل دی گئی۔ مرکزی سیکٹر سکیم کے تحت اجلاس منعقد ہوا۔ اجلاس میں ضلع افسر نے مختلف اجزاء کا جائزہ لیا جیسے خریف کے فصل کا احاطہ، کھاد کی دستیابی اور تقسیم، رعایتی نرخوں پر زرعی آلات کی تقسیم، زرعی آلات بینک کے قیام کے لیے درخواست دینے والے مستحقین کو منظوری لیٹر جاری کرنا، سوائل ہیلتھ کارڈ کی تقسیم، بیج کی تقسیم اور وزیر اعظم کسان سمان، ضلع افسر نے خریف سیزن میں مکئی کی فصل کی کاشت کے حوالے سے کسانوں کی حوصلہ افزائی کرنے کی ہدایت کی۔  کھاد کا جائزہ لینے کے لیے ایک تحقیقاتی ٹیم تشکیل دی گئی اور بارڈر بلاک میں واقع ہر خوردہ فرٹیلائزر فرٹیلائزر کی مکمل چھان بین کرنے کی ہدایت کی گئی۔ خریف سیزن میں یوریا کھاد کی دستیابی اور خریداری کے حوالے سے بھی ڈسٹرکٹ آفیسر کی طرف سے مکمل جائزہ لیا گیا۔  خریف کے بیجوں کی تقسیم کے جائزے کے دوران ضلع زراعت آفیسر نے اجلاس میں بتایا کہ مکئی کے علاوہ باقی تمام فصلوں کے بیج دو سے چار دنوں میں سو فیصد تقسیم کر دیے جائیں گے۔  مکئی کی فصل کے لیے کسانوں کی خصوصی حوصلہ افزائی کرتے ہوئے مکئی کے بیج تقسیم کیے جائیں گے۔  زرعی میکانائزیشن سکیم کے تحت ضلع افسر نے اسسٹنٹ ڈائریکٹر زرعی انجینئرنگ کو ہدایت کی کہ  وقت پر مہیا کروائیں  ضلع افسر کی طرف سے یہ بھی ہدایت کی گئی کہ ضلع میں پہلے قائم کیے گئے زرعی مشینری بنک کے مستفید ہونے والوں کے سلسلے میں اسسٹنٹ ڈائریکٹر زراعت اس بات کو یقینی بنائیں کہ کسانوں کو مقررہ نرخ پر زرعی مشینری درحقیقت فراہم کی جا رہی ہے۔ اسسٹنٹ ڈائریکٹر کیمیکلز کو ہدایت کی گئی کہ ستمبر 2024 تک مٹی کے 70 فیصد نمونوں کی جانچ اور سوائل ہیلتھ کارڈز کسانوں میں تقسیم کیے جائیں۔  نیتی آیوگ میں سوائل ہیلتھ کارڈ کو ایک اشارے کے طور پر بھی مطلع کیا گیا ہے۔ وزیرِ اعظم کسان سمان ندھی یوجنا کے جائزے کے دوران، نااہل کسانوں سے لی گئی رقم کی وصولی کے سلسلے میں، یہ ہدایت دی گئی تھی کہ سب ڈویژنل ایگریکلچر آفیسر وزیر اعظم کسان سمان ندھی یوجنا کے لیے سب ڈویژنل ایگریکلچر آفیسر ہے۔ – ڈویژن کی سطح پر، اس لیے متعلقہ سب ڈویژنل ایگریکلچر آفیسر کو اپنے سب ڈویژن میں اختیار دیا گیا ہے کہ ہم ترجیحی بنیادوں پر نااہل مستحقین کے خلاف مزید کارروائی کو یقینی بنائیں گے۔ سنٹرل سیکٹر اسکیم کے تحت تشکیل دی گئی فارمر پروڈیوسر یونین کے لیے ضلع سطح کی مانیٹرنگ کمیٹی کا جائزہ لینے کے دوران، ڈی ڈی ایم نبارڈ نے پی پی ٹی کے ذریعے ضلع میں تشکیل دی گئی فارمر پروڈیوسر یونین کے بارے میں بتایا کہ ضلع میں 12 فارمر پروڈیوسر یونین ہیں۔ جس کے لیے ایک خصوصی مہم چلا کر مختلف اسکیموں جیسے جی ایس ٹی لائسنس، کھادوں، بیجوں، کیڑے مار ادویات وغیرہ کو بینکوں کے قرضوں اور حکومت کی مختلف اسکیموں سے جوڑنا ہوگا۔  اس کے لیے 10 جولائی کو ایک کیمپ کا انعقاد کیا جائے گا تاکہ ایف پی او کو اس سے منسلک کیا جا سکے۔ ڈی ایم نے تمام ایف پی او کا جائزہ لیا اور پیش رفت پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے حکم دیا کہ تمام ایف پی او میں کاروبار کو بڑھایا جائے اور اسے زراعت، مویشی پروری، ماہی پروری، باغبانی وغیرہ کی سرکاری اسکیموں سے جوڑ دیا جائے۔ پروسیسنگ کی جاتی ہے، اس سے کسانوں کو بہت فائدہ ہوگا۔ مذکورہ اجلاس میں ضلع زراعت افسر برجیش کمار، زرعی شماریات افسر نریندر داس، نابارڈ کے ڈی ڈی ایم کے ساتھ متعلقہ محکمہ کے تمام افسران موجود تھے۔