ہمارے سامنے بہت سے چیلنجز ہیں مگرعوام سے کیے گئے وعدے پورے کریں گے:پزشکیان

تاثیر۷      جولائی ۲۰۲۴:- ایس -ایم- حسن

تہران،07جولائی:ایران کے نئے صدر مسعود پزشکیان نے اپنی انتخابی کامیابی کے بعد ہفتے کی شام اپنی پہلی پریس کانفرنس کی۔پزشکیان نے کہا کہ ہم نے عوام سے جو وعدے کیے ہیں وہ پورے کریں گے۔انہوں نے مزید کہا کہ “ہمیں بہت سے چیلنجوں اور مشکلات کا سامنا ہے۔ اس کے باوجود ہم عوام سے کیے وعدے پورے کریں گے۔ہم ملک میں ایک نیا باب رقم کرنا چاہتے ہیں‘‘۔انہوں نے سپریم لیڈر علی خامنہ ای کا شکریہ ادا کرتے ہوئے مزید کہا کہ اگر وہ نہ ہوتے تو میرا نام بیلٹ بکس سے باہر ہوتا۔انہوں نے کہا کہ سپریم لیڈر کی قیادت کے بغیر ہم اس مقام تک نہیں پہنچ پاتے جہاں ہم اس وقت ہیں۔انہوں نیکہا کہ ان کے حریف سعید جلیلی ایک دوست ہیں اور میں ان کا احترام کرتا ہوں”۔
قابل ذکر ہے کہ اصلاح پسند مسعود پزشکیان نے کو قدامت پسند امیدوار سعید جلیل کو شکست دیتے ہوئے دوسرے مرحلے میں حتمی کامیابی حاصل کرتے ہوئے صدارتی الیکشن جیت لیا تھا۔وزارت داخلہ کی طرف سے شائع کردہ ابتدائی نتائج کے مطابق پزشکیان کو 16 ملین سے زیادہ ووٹ ملے، جب کہ جلیلی کو 13 ملین سے زیادہ ووٹ ملے۔وزارت داخلہ نے کہا کہ انتخابات کے دوسرے دور میں ٹرن آؤٹ 49.8 فیصد تک پہنچ گیا تھا۔
قابل ذکر ہے کہ یہ انتخابات 19 مئی کو ہیلی کاپٹر حادثے میں جاں بحق ہونے والے ابراہیم رئیسی کے جانشین کے انتخاب کے لیے جلد بازی میں منعقد کیے گئے تھے۔پہلے سیشن میں جو 28 جون کو میں 61 ملین لوگوں نے ووٹ کاسٹ کیے تھے اور ٹرن آؤٹ کا تناسب 39.92 فی صد رہا۔ یہ 1979 کے بعد سے اب تک کی کم ترین سطح پر ہے۔ 1980ء اور 1990ء کی دہائیوں میں ووٹر ٹرن آؤٹ کی شرح تقریباً 80 فی صد تھی۔پزشکیان نے بھی پہلے راؤنڈ میں 42.4 فی صد ووٹ حاصل کیے، جب کہ جلیلی کو 38.6 فی صد ووٹ ملے۔جب کہ ایک اور قدامت پسند امیدوار محمد باقر قالیباف تیسرے نمبر پر آئے۔